اسلامک معلومات قصص الانبیا ء

تمہیں دی گئی چیز فقط تمہارے رب کی عطا ہے۔

جب تمہیں کچھ عطا کیا جائے۔ وہ مان ہو، عزت ہو، محبت ہو، کوئی عہدہ ہو، یا وہ کوئی تمغہ ہو! تو اسے اپنا حق سمجھ کر،سر اٹھا کر وصول مت کرنا۔ سر کو جھکا لینا۔ وہ ایک لمحہ جب تمہیں کچھ دیا جا رہا ہو، بہت نازک ہوتا ہے۔ اسی لمحے میں تمہارا عمل یہ فیصلہ کرتا ہے کہ تم نے عاجزی کی راہ اختیار کی، یا تکبر کی۔ اگر تمہاری گردن میں ہلکی سی اکڑ بھی پیدا ہوگئی، تمہارے دل میں ہلکا سا غرور بھی آگیا،

لہجے سے ہلکا سا تفاخر بھی جھلک گیا تو مزید کسی رحمت کی امید مت رکھنا۔ تم نے وہ راہ چنی جو فرعون نے چنی تھی تمہیں اس لمحے اپنے دل میں سر اٹھانے والے تکبر کے سانپ کا سر کچلنا ہے، اگر تم نے ایسا نہ کیا۔ تو وہ تمہیں اندر ہی اندر ڈس لے گا۔ یہ وہ وقت ہوتا ہے جب تمہارا رب تمہیں آزما رہا ہوتا ہے۔ عاجز رہے تو کامیاب رہو گے۔ گردن جھکا لو! تمہیں دی گئی چیز فقط تمہارے رب کی عطا ہے۔
دعا ہے کہ اللّہ ہمیں اپنا شکر گذار بنائے
🌺آمین🤲

loading...
loading...

Leave a Comment