اسلامک وظائف

سورۂ فاتحہ کی فضیلت

سورۂ فاتحہ کی فضیلت حدیث نمبر 1: قرآن مجید میں سب سورتوں سے بہتر (افضل) سورۂ احمد للہ رب العالمین ہے۔ (مسند احمد 177/4) حدیث نمبر 2: عَوَذَنِیْ رَسُوْلُ للہِ صَلَّی اللہُ عَلَیْہِ وَسَلَّمَ بِفَاتِحَۃِ الْکِتَابِ تِفْلًا۔ (المعجم الکبیر للطبرانی : 159/7) ایک صحابی رضی اللہ عنہ نے سانپ کے کاٹے ہوئے پر دَم کیا۔ اللہ کے حکم سے وہ اچھا ہوگیا (صحیح مسلم، کتاب الطب، باب جواز اخذ الاجرۃ علی الرقیۃ بالقرآن والاذکار، رقم : ۲۲۰۱)

حدیث نمبر 3: فَاتِحَۃُ الْکِتَابِ شِفَائٌ مِّنْ کُلِّ دَآئٍ۔ (سنن الدارمی : 445/2) سورۂ فاتحہ میں ہر بیماری سے شفا ہے۔ حدیث نمبر 4: اِذَا قَرَأْتَ الْفَاتِحَۃَ وَقُلْ ہُوَ اللہُ اَحَدْ فَقَدْ اَمِنْتَ مِنْ کُلِّ شَیْ ئٍ اِلَّا الْمَوْتُ اور جب تم نے سورۂ فاتحہ اور قل ہو اللہ احد پڑھ لیا تو سوائے موت کے ہر آفت سے مامون ہوگئے۔ (مجمع الزوائد 122/10) حضرت سائب بن یزید رضی اللہ عنہ روایت کرتے ہیں: رسول اللہ صلی اللہ علیہ و سلم نے مجھے سورۂ فاتحہ پڑھ کر دم کیا۔ اللہ تعالی میری آپکی ہمارے والدین اور تمام امت کے مسلمانوں کی مغفرت فرمائے ، اللہ تعالی ہماری اور ہماری اولاد کی ہر قسم کے شر سے حفاظت فرمائے ، اللہ تعالی تمام مسلمانوں و غیر مسلموں کو ہدایت کے نور سے منور فرمائے، اللہ تعالی ہم سب کو پانچ وقت باجماعت نماز خوشووخزوع سے پڑھنے والا بنا دے ، اللہ تعالی ہمیں تہجد کی پابندی نصیب فرماکر کثرت سے اپنا ذکر کرنے والا محبوب بندہ بنا دے ، جناب محمد رسول اللہ صل اللہ علیہ وآلہ و بارک وسلم کے نقش کے قدم پر چلنے والا اور کثرت سے درود شریف پڑھنے والا بنادے آمین ثم آمین

دوستو اللہ سے مانگنا اور اللہ ہی سے مانگتے رہنا اللہ رب العزت کو بہت پسند ہے ، اللہ تعالی کی ذات ِعالی سے طلب کرنا اور صرف اللہ ہی کی ذات پر توکل کرنا اس بات کی دلیل اور اس عقیدہ اور یقین کی پختگی کی علامت ہے کہ جو کچھ بھی اس کاینات میں ہوتا ہے یہ ہو چکا ہے یا ہوگا صرف اور صرف ایک اللہ ہی کی مرضی سے ہوگا اللہ کی مرضی کے بغیر نا کچھ ہوا اور نہ ہوسکتا ہے ۔ درخت کا ایک پتہ بھی اللہ کے حکم کے بغیر نہیں ہلتا۔ نیکی کا م کرنے کی طاقت اور براءی سے بچنے کی قوت صرف اور صرف اللہ پاک ہی عطافرماتے ہیں ۔ بے شک اللہ رب العزت ہی ہم سب کے مالک ، خالق اور رازق ہیں۔ اللہ تعالی نے حضور نبی کریم صل اللہ علیہ وآلہ وسلم کو ہم سب کیلے خاتم النبین بنا کر بھیجا ۔ آپ صل اللہ علیہ وسلم کے نقش قدم پر چلنے ہی میں دنیا و آخرت کی فلاح ہے اور غیروں کے طریقے پر چلنا ناکامی ہی ناکامی ہے ۔

Leave a Comment