اسلامک معلومات

کن سے فیکن کا سفر

کن سے فیکون کا سفرہزاروں غم سہنے کے بعد تہجد کا ایک سجدہ نصیب میں لکھا جاتا ہے.اور وہ سجدہ کرنے والا اللہ کا سب سے پسندیدہ بندہ ہوتا ہ.جس کو وہ ان گنت لوگوں میں سے چن لیتا ہے .جس کی ملاقات کے لیے وہ خود انتظام کرتا ہے .

دیدار کے لیےکن سے فیکون

رشک آتا ہے مجھے اس شخص کے مقدر پر جس کی ایک پکار سننے کے لیے وہ سارا عالم خاموش کروا دیتا ہے.جس کے دیدار کے لیے وہ آسمان کو سیاہی سے بھر دیتا ہے.اور چاروں طرف اندھیرا کر دیتا ہے.تاکے اسکے بندے کے آنسو کوئی تیسری ذات نہ دیکھ سکے.تاکے اسکے بندے کے جذبات کی خوداری پر پردہ پڑا رہے.

جستجو کی فکر

سب کو بے فکری کی نیند سلا کر وہ اپنے اس خاص بندے کو اپنی جستجو کی فکر میں لگا دیتا ہے.طاق راتوں کا انتظار کرنے کی ضرورت کہاں پڑتی ہے.نم آنکھیں اور سسکتا ہوا دل اس کو تہجد میں ڈھونڈ لیتا ہے.وہ جو دو جہانوں میں سما نہیں پاتا.وہ پھر اس ٹوٹے ہوئے دل میں سما جاتا ہے.تم سوچتے ہو آزمائش کا وقت بہت لمبا ہو گیا ہے.مگر درحقیقت ملاقات کا وقت بڑھا دیتا ہے.

کائنات کے سامنے,اللہ کو بہت پسند ہے جب تم دنیا سے نہیں اس سے مانگتے ہوجب تم بےبسی کا رونا کائنات کے سامنے نہیں اسکے سامنے روتے ہو.جب تم سب ختم ہونے کے بعد بھی اس یقین کے ساتھ دعا کرتے ہو.کہ اسکے سوا کوئی تمہیں کچھ نہیں دے سکتاجب تم سجدے پہ سجدہ کرتے ہو.

یقین کا بھرم

جب تم سانس لۓ بغیر بے ساختہ اسکا نام پکارنے لگتے ہو.تب وہ تمہیں دیکھ کر مسکراتا ہے.تب وہ تمہارے یقین کا بھرم رکھ لیتا ہے.اور تمہارے مان کی لاج رکھ لیتا ہے.سارے وسوسوں کو ختم کر دیتا ہے.

محبت کا رنگ

اسکی مسکراہٹ دکھائی نہیں دیتی مگر محسوس کرو تورگوں میں اسکی محبت کا رنگ خون کی مانند دوڑنے لگتا ہے.اس سے بہترین لکھاری تو کوئی ہو ہی نہیں سکتا.جو اختیار رکھنے کے باوجود نصیب کے پنوں کو اپنی چاہت سے تمہاری چاہت میں بدل دیتا ہے.وہ بادشاہوں کا بادشاہ ہو کر بھی تمہیں سنتا ہے.اور ایک تم ہو کے فرض ہونے کے باوجود اسکی پکار کا جواب نہیں دیتے.کبھی اسکی محبت میں رنگ کرکے تو دیکھو!کائنات کے سارے رنگ پھیکے لگیں گے.کبھی اس کو سن کر تو دیکھو!

Leave a Comment