قصص الانبیا ء

ڈاکٹر فرحت ہاشمی کی دینی خدمات

السلام علیکم ورحمتہ اللہ۔۔۔۔۔۔۔۔ناظرین کرام۔۔۔۔۔۔ اگر ہم اسلام کی تاریخ اٹھائیں تو اس بات سے آگاہ ہوتے ہیں کہ اس میدان میں صرف مرد ہی نہیں بلکہ عورتوں کا بھی اس میں گراں قدر حصہ ہے بلکہ تاریخ ہمیں بہت سی ایسی خواتین سے متعارف کرواتی ہے جنہوں نے زندگی کے مختلف شعبوں میں مختلف خدمات سر انجام دیں۔۔خصوصا علم کے میدان میں اس کی روشن مثالیں ہیں۔ تعلیم و تربیت کے حوالے سے معاشرے میں خواتین کا کردار بہت واضح ہے۔ایسی ہے ایک مایہ ناز خاتون ڈاکٹر فرحت ہاشمی ہیں ۔ محترمہ ڈاکٹر فرحت ہاشمی 1957 پاکستان کے شہر سرگودھا میں پیدا ہوئیں۔ ان کے والد عبدالرحمن ہاشمی خود بھی ایک عالم دین ہیں۔ ان کا شجرہ نسب 53ویں پشت میں جاکر جلیل القدر صحابی ابن عباس رضی اللہ تعالی عنہ سے جا ملتا ہے۔ آپ کے والد کی خواہش تھی کہ میری بیٹی دینی تعلیم حاصل کرے اور قران اور حدیث کی تعلیمات کو دنیا میں عام کرے۔ اور انہوں نے اپنے والد کی خواہش کے آگے سر تسلیم خم کیا۔ ڈاکٹر صاحبہ ہی نہیں ان کے دوسرے بہن بھائ بھی دین سرگرمیوں میں پیش پیش ہیں۔

آپ کے شوہر کا نام ڈاکٹر محمد ادریس زبیر ہے اور ڈاکٹر صاحبہ کی دینی مصروفیات کو جاری رکھنے میں انہیں اپنے شوہر کا بھرپور تعاون حاصل ہے۔ آپ نے ابتدائ تعلیم سرگودھا ہی سے حاصل کی اور پھر سرگودھا ہی کے گورنمنٹ ڈگری کالج سے گریجویشن کیا۔ جس کے بعد ڈاکٹر فرحت ہاشمی نے پنجاب یونیورسٹی سے عربک میں ماسٹر کی سند حاصل کی دوران تعلیم انہوں نے متعدد ایوارڈز اور سکالر شپس حاصل کیں۔

ڈاکٹر فرحت ہاشمی نے سرگودھا ڈگری کالج میں لیکچرر کی حیثیت سے اپنے کیریر کا آغاز کیا۔ کچھ ہی عرصہ بعد انہوں نے فیکلٹی ممبر کی حیثت سے انٹرنیشنل اسلامک یونیورسٹی اسلام آباد کو جوائن کیا اور اسی یونیورسٹی سے انہیں گلاسگو یونیورسٹی سے علوم حدیث میں پی ایح ڈی کرنے کے لیۓ اسکالرز شپ ملی۔ گلاسگو یونیورسٹی اسکاٹ لینڈ سے ڈاکٹریٹ کی ڈگری حاصل کرنے کے بعد آپ نے واپس پاکستان آکر اسلامک یونیورسٹی میں تدریس کا سلسلہ دوبارہ شروع کیا۔دوران تدریس انہیں احساس ہوا کہ خواتین میں دینی شعور اجاگر کرنے کی اشد ضرورت ہے۔ اس ضرورت کو مدنظر رکھتے ہو‎ۓ انہوں نے 1994 میں اسلام آباد میں الہدی انٹرنیشنل سینٹر کی بنیاد رکھی۔ اس سینٹر نے بہت جلد ہی خواتین کی دینی تعلیم و تربیت کے حوالے سے ایک نمایاں مقام حاصل کرلیا۔ اس فاؤنڈیشن کے دروازے ہر اس خاتون کے لئے کھلے ہیں جو کہ دینی تعلیم حاصل کرنے کی خواہش مند ہے۔ چاہے اس کی مادی حیثیت کچھ بھی ہو۔ آج الھدی سینٹر کی شاخیں مختلف ممالک میں پھیلی ہوئ ہیں۔ڈاکٹر فرحت ہاشمی خواتین کوبنیادی طور پر قران کریم کی تعلم دیتی ہیں اور اس سلسلہ میں ان قران کے ترجمہ اور تفسیر پر مشتمل سی ڈیز اور کیسٹس کو ایک نمایاں حیثیت حاصل ہے۔مملکت سعودی عرب میں الھدی کی کلاسز کا اجراءسعودی عرب میں الھدی کی کلاسز کے اجراء سے پہلے یہاں کے علماء نے ڈاکٹر فرحت ہاشمی کی تفسیر کا نہایت تفصیل سے جائزہ لیا اور پھر اس تفسیر کو پڑھانے کی اجازت دی۔

اور آج سعودی عرب کے مختلف شہروں میں میں الھدی کے کلاسز جاری ہیں۔کینیڈا میں ان کی تبلیغی سرگرمیوں کا بڑا سیٹ اپ ہے 2010ء میں ان کو دنیا کی 500بااثر ترین مسلمان شخصیات میں شامل کیا گیا ۔انہوں نے عالم اسلام کے بڑے کبار علماء سے دین کی تعلیم حاصل کی انہیں عصر حاضر کے عظیم محدث علامہ شیخ الدین البانی سے ملاقات کا شرف بھی حاصل ہوا۔غیر مسلموں کی بھی ایک بڑی تعدادبھی بلا رنگ و نسل ان کی شاگرد ہے۔ ان کی سب سے بڑی خوبی یہ ہے کہ انہوں نے نہایت اعلی تعلیم یافتہ ،سیکولر، انگریزی دان ،دین سے نا بلد،مغرب سے متاثر امیر ترین طبقے تک بھی پہنچا یا ۔ان کی ذاتی ویب سائٹ تدریس کی دنیا کی سب سے بڑی آڈیوویب سائٹ ہے ان کے تبلیغی تدریسی ادارے الھدی کی AlHudaPk.Com انٹرنیٹ پر اردو اور انگلش آڈیو، ویڈیوو کتب کی بہترین ملٹی میڈیا ویب سائٹ ہے۔ان کے تبلیغی ادارے الھدی کی شاخیں دنیا کے ہر براعظم میں قائم ہیں پاکستان،کینیڈا،انگلینڈ،دبئی سمیت کئی ممالک میں ان کا تدریسی اور تبلیغی کام جاری ہے ان کو پوری دنیا میں اسلام کی سفیر مانا جاتا ہے انہیں بلامبالغہ مجاہد ہ اسلام کہا سکتا ہے ان کی خدمات میں اسلام کا ایک شدت پسند مذہب ہونے کے الزام کا عالمی دفاع بھی شامل ہے۔لڑکیوںکی دینی تربیت کے لئے انہوں نے خاص طور پر قرآن کی تفسیر،دروس احادیث،عقیدہ، حسن اخلاق ، تفسیر، تجوید ، سیرت النبوی صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم ، اسلامی ہیروز،اسلامی تاریخ ،انبیا علیہ السلام پرفرقہ واریت سے پاک خالص اسلام و توحید پرمبنی بے شمار آڈیوکورس ترتیب دئیے ہیں جن سے لاکھوں کی تعد اد میں دنیا بھر میں خواتین مستفید ہو کر اپنی اور اپنے خاندان کی دنیا و آخرت بہتر ین بنا چکی ہیں۔ان کے کورسز سے مرد اوربچے بھی مستفید ہو سکتے ہیں پیغام ٹی وی بے شمار ٹی وی چینلز اور ایف ایم ریڈیوز ان کے تربیتی کورس اوردروس روزانہ نشر بھی کر رہے ہیں حسن اخلاق پر ان کے لیکچرز کی بھی عمدہ ورائٹی موجود ہے اور ان کو سن کرڈاکٹر فرحت ہاشمی کے علم و عقل و حکمت کی داد دینی پڑتی ہے کیونکہ وہ ایسے ایسے علمی نکات نکالتی ہیں کہ انسانی عقل دنگ رہ جاتی ہے اسی لئے ان کے شاگردوں میں ڈاکٹرز اور نہایت اعلی تعلیم یافتہ پروفیشنلز کی ایک بڑی تعداد موجود ہے۔امام ابن تیمیہ کے عقیدہ واسطیہ پر بھی ان کے دروس بھی نہایت عمدہ ہیں۔ ایمانیات، عبادات،اخلاقیات ،اعمال ، معاشیات سمیت سماجی گھریلو تعلقات پر ان کے دروس سے ہزاروں لوگ اپنی اصلاح کر کے گھریلو اور دیگرپریشانیوں سے نجات پا چکے ہیں۔اس وقت دنیا کی بڑی سے بڑی دینی جماعتیں جدید ذرائع پرتبلیغ و تدریس وہ کام نہیں کر سکیں جو ایک اکیلی خاتون عالمہ دین مفسرہ قرآن نےکیا ہے۔

وہ واحد خاتون عالمہ دین ہیں جن کی ہر آیت کی آڈیو تفسیر و درس بخاری وغیرہ جدید میڈیا پرآسانی سے دستیاب ہیں۔ان مبلغات کا کام سب کیلئے ایک روشن مثال ہے۔ قرآن حکیم کی تفسیر لکھنے اور پڑھانے کے ساتھ ساتھ استاذہ محترمہ نے نونہا لان اسلام کے لیے بھی ایک کورس چلڈرن آف ہیون کے نام سے ڈیزائن کیا ہے۔ یہ کورس تعطیلات موسم گرما میں بچوں کو پڑھانے کے ساتھ ان کی تربیت پر بھی ، زور دیا جاتا ہے۔ اس کے علاوہ خواتین کی تربیت کے حوالے سے استاذہ اپنے ادارے کے زیر اہتمام مختلف کورسز اور ورکشاپس کا اہتمام کرتی ہیں۔ اورنسل نو کو سیرت کی خوشبو سے معطر کرنے کے لیے سیرت کلاسز کا اہتمام بھی ان کی زیر نگرانی ہوتا ہے۔۔خواتین کی تربیت کے حوالے سے اور قرآن کے واقعات کے حوالے سے ان کے پروگرامز پیغام ٹی۔وی نے کاسٹ کیے ہیں۔

ان کے بہت سے اصلاحی کورسز کتابی شکل میں بھی پبلش ہو چکے ہیں۔ اس فتنوں کے دور میں فتنوں سے نسل نو کو محفوظ رکھنے کے لیے کورس “فتنوں کا دور” با قاعدہ پڑھایا جاتا ہے۔الغرض شب وروز خدمت دین میں مصروف رہتی ہیں۔ آپ کا اور بھی بہت سا علمی و تحریری کام ہے جو کتابی شکل میں شائع ہو چکا ہے اور شائقینِ علم کی پیاس بجھا رہا ہے۔ رب العزت ان کا سایہ تا دیر ہمارے سروں پر قائم رکھے تاکہ ہم اس سر چشمہ علم سے فیض یاب ہوتے رہیں۔آمین۔ ۔ ۔۔۔۔۔۔

Leave a Comment