قصص الانبیا ء

پاکستان میں تاریخی مساجد کا ذکر

پاکستان میں تاریخی مساجد کا ذکر

پاکستان میں تاریخی مساجد کا ذکر

مسجد یا کسی بھی عبادت گاہ کا نام سنتے ہی مقدس سا خاکہ ذہن میں بنتا ہے. وہ جہاں بھی جیسی بھی ہو ایک مسلمان کیلیئے اسکا ادب و احترام فرض ہو جاتا ہے ۔لیکن آج ہم کچھ ایسی مساجد کا ذکر کریں گے .جو پاکستان میں تاریخی لحاظ سے اہمیت رکھتی ہیں ۔

فیصل مسجد

فیصل مسجد اسلام آباد میں واقع ہے .i جنوبی ایشیا کی سب سے بڑی مسجد کا لقب بھی حاصل ہے .اس مسجد کا نام سعودیہ عرب کے فیصل بن عبدالعزیز کے نام پر رکھا گیا تھا ۔ مسجد کو تعمیر کرنے والے ترکی کے انجنئیر تھے ۔ فیصل مسجد کا رقبہ پانچ ہزار مربع میٹر پر محیط ہے۔ایک وقت میں تین لاکھ نمازی نماز ادا کر سکتے ہیں ۔ اِس مسجد کا فنِ تعمیر عربی اور ترکی فنِ تعمیر کی عکاسی کرتا ہے۔

بادشاہی مسجد
بادشاہی مسجد بھی پاکستان کی مشہور مساجد میں ہوتا ہے ۔ اور دنیا کی پانچویں بڑی مسجد ہونے کا بھی اعزاز حاصل ہے ۔ اس مسجد کی بنیاد مغل بادشاہ اورنگزیب نےاسکی بنیاد رکھی یہ مغلوں کے دور کی بڑی مسجد ہے ۔ اور اب لاہور کو پہچانا ہی بادشاہی مسجد کی وجہ سے جاتا ہے ۔ پاکستان کے علاوہ دنیا بھر سے سیاح دیکھنے کیلیئے آتے ہیں .

شاہ جہاں مسجد پاکستان کے صوبہ سندھ کے شہر ٹھٹھہ میں واقع ہے ۔ اس مسجد کو تعمیر مغل بادشاہ نے انیس سو سینتالیس سے لیکر انیس سو انچاس کے عرصہ کےدوران کی تھی ۔ اس مسجد کے ترانوے گنبد ہیں ۔ مسجد کی خاص بات یہ ہے کہ اس کے موذن کی آواز بغیر کسی مواصلاتی آلہ کے بغیر بھی گونجتی ہے .

گول مسجد

 

طوبی مسجد روشنیوں کے شہر یعنی کراچی میں واقع ہے اس مسجد کو گول مسجد بھی کہا جاتا ہے کیونکہ یہ دنیا کی واحد مسجد ہے جس کا صرف ایک گنبد ہے ۔اس گنبد کی لمبائی ستر میٹر ہے ۔اس پوری مسجد کو سفید سنگ مر مر سے تعمیر کیا گیا ہے ۔

وزیر خان مسجد لاہور میں دہلی گیٹ سے تھوڑی دوری پر واقع ہے ۔ اس مسجد کو فارسی اور عربی خطاطی سے سجایا گیا ہے ۔یہ مسجد اپنی منفرد خطاطی کی وجہ سے مشہور ہے .

بھونگ مسجد پاکستان کے سب سے بڑے صوبے پنجاب کے شہر رحیم یار خان میں واقع ہے ۔ اسکو تعمیر کرنے کیلیئے پچاس سال کا عرصہ لگا یہ اپنی خوبصورتی اور رنگینیت کی وجہ سے مشہور ہے اسے انیس سو چھیاسی میں آغاخان ایوارڈ سے بھی نوازا گیا۔

Leave a Comment