معلومات عامہ

میاں بیوی کے حقوق و فرائض؟میاں بیوی معاشرے کا ایک اہم جز ہیں

میاں بیوی معاشرے کا ایک اہم جز ہیں-ان سے ہی خوشگوار معاشرہ پروان چڑھتا ہے-اور اگلی نسلیں کیسی ہونگی اس کا انحصار بھی ان پر ہے-اللہ تعالی نے میاں بیوی کے حقوق و فرائض مقرر کر رکھے ہیں-اور جو ان کو پورا نہیں کرے گا ان کے لیے سزا بھی مختص کر رکھی-آج کل کے معاشرے میں مرد اور عورت میں بہت زیادہ مقابلہ بازی آگئی ہے-عورت چاہتی ہے کہ وہ مرد کے برابر ہو-

آج کل عورت ہر شعبے میں پائی جاتی ہے ظاہر ہے ان میں سے کچھ کی مجبوریوں کے تحت جاتیں ہیں-اللہ تعالی نے مرد کو حاکم بنایا ہے-اللہ تعالی نے مرد کو عورت سے زیادہ اختیارات دیے ہیں-اللہ تعالی نے ہمیں مرد و عورت میں فرق کرنا نہیں سکھایا-اگر میاں بیوی صاحب اولاد ہیں اور دونوں ہی جاب کرتے ہیں اور اپنی اولاد کو کسی اور کے پاس چھوڑ جاتے ہیں چاہے وہ کوئی بھی ہو تو وہ غلط کرتے ہیں-آپ کو کیا پتا کہ آپ کی اولاد پیچھے کیا کر رہی ہے یا اسے کیا سکھایا جا رہا ہے-بچے کی اچھی پرورش ماں باپ سے بڑھ کر کوئی نہیں کر سکتا-بیوی صرف گھر بار ہی سنبھال لے تو بہت بڑی بات ہے-بیوی کے فرائض: – عورت پر فرض کیا گیا ہے کہہ اپنے مرد کے گھر کی حفاظت کرے جب وہ موجود نا ہو – اس کے مال اور عزت کی حفاظت کرے اور مرد کی مرضی کے بغیر کسی غیر مرد کو گھر میں نا داخل ہونے دے-

بیوی کو چاہیے کہ جب شوہر تھکا ہوا گھر آئے تو بجائے اس سے لڑنے جھگڑنے کے اس سے مسکرا کر بات کرے-آپ کو جو بھی بات کرنی ہے وہ آپ بعد میں آرام سے بھی کر سکتی ہیں لیکن پہلے اپنے شوہر کے آرام کی فکر کریں- اگر شوہر اپنی بیوی کو دیکھ کر مسکرائے تو اس عورت کے لیے جنت کا وعدہ کیا گیا- بیوی کو چاہیے کہ شوہر جب گھر آئے تو وہ سجی سنوری ہو ناکہ سر پر دوپٹہ کسا ہو- شوہر کے فرائض:- شوہر کا فرض ہے کہ اپنی بیوی سے حسن سلوک سے پیش آئے– شوہر کو چاہیے کہ وہ بیوی اور اپنے گھر والوں کی ضروریات کو پورا کرے- بیوی کو حق مہر ادا کیا جائے– اس کے الگ کمرے ، باتھ روم اور کچن کا انتطام کیا جائے- شوہر کا فرص ہے وہ بیوی کو خرچ پورا دے- بیوی سے نرمی کا برتاو کرے-

Leave a Comment