قصص الانبیا ء

محبت پیدا کر نے کیلیے خاص وظیفہ

محبت پیدا

محبت پیدا کر نے کیلیے خاص وظیفہ

محبت پیدا کر نے کیلیے خاص وظیفہ ۔ دوستو۔۔۔۔۔۔ایک عورت کےلیے اس کی اصلی محبت کی جگہ اس کے محرم رشتہ دار ہیں یا پھر اس کا خاوند۔ اس کےعلاوہ ایک عورت کےلیے کسی بھی طورلائق نہیں کہ وہ کسی کی محبت اپنے دل میں لیے پھرے۔
لیکن اگر یہ معاملہ صرف خواتین کے ساتھ ہیں تو پھر ہر مسلم خاتون سے دلی محبت کی جاسکتی ہے۔ کوئی حرج نہیں ہے۔

اپنی اصلاح

دوسری بات اگرکسی خاتون نے دوسری خاتون کے دل میں اپنے لیے محبت اور رحم پیدا کرنا ہے. تو اس کا سب سے بہترین حل یہ ہے کہ اگر کسی سے کچھ ایسی باتیں سرزد ہوئی ہیں کہ جن کی وجہ سے نفرت پیدا ہوگئی ہے.

نفرت کا باعث

تو ایک اپنی اصلاح کی جائے، دوسرا ہر وہ بات چھوڑ دی جائے جو دوسری کےلیے نفرت کا باعث بن رہی ہو، تیسرا جس کے دل میں اپنے لیے محبت اوررحم ڈالنا ہو، شرعی حدود پر سختی سے عمل کرکےاس کی باتوں کو مانا جائے .

حضرت ابو ہریرہ رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا:

عیوب تلاش

بد گمانی سے بچتے رہو کیونکہ بد گمانی کی باتیں اکثر جھوٹی .ہوتی ہیں ، لوگوں کے عیوب تلاش کرنے کے پیچھے نہ پڑو .

آپس میں حسد نہ کرو .

کسی کی پیٹھ پیچھے برائی نہ کرو ، بغض نہ رکھو .

بلکہ سب اللہ کے بندے آپس میں بھائی بھائی بن کر رہو ۔

محبت اوررحم

.اگر ایک خاتون اپنے خاوند کےدل میں اپنے لیے محبت اوررحم پیدا کرنا چاہتی ہے.

تو اسے ان باتوں پرتوجہ دینی چاہیے
خاوند اگرغریب بھی ہو توبھی اس کو اپنا امیر سمجھے اپنا بڑا سمجھے.

کیونکہ رزق اللہ تعالیٰ کے اختیار میں ہے۔

محبت پیدا کر نے کا ایک اور گُر

خاوند کی خوشی کو اپنی خوشی پر ترجیح دے اور اس کی ضرورت کو اپنی ضرورت پر مقدم رکھے۔

خاوند کے ساتھ ہمیشہ خندہ پیشانی سے پیش آئے۔ اگر کھانا کھانے کا وقت ہے تو بیوی کو چاہئے .

کہ وہ کوشش کرے کہ اپنے میاں کے ہاتھ خود دہلائے۔

خاوند کی گنجائش

کبھی بھی خاوند کی گنجائش سے زیادہ فرمائش نہ کرے۔ بعض خواتین یہ غلطی کرتی ہیں کہ بے موقع خاوند کو اپنی داستان سنانے بیٹھ جاتی ہیں یہ نہیں دیکھتیں .

کہ اس کو جلدی دفتر جانا ہے یا یہ تھکا ہوا آیا ہے یا اس وقت اس کا دل باتوں کے بجائے آرام کرنے کو چاہ رہا ہے تو بے موقع اپنی داستان کو چھیڑ کر بیٹھ جانا یہ انتہائی بے وقوفی ہو تی ہے۔ خاوند کے ذاتی کام ہمیشہ خود کرنے کی کوشش کریں۔

شوھر کی پریشانی کو اپنی پریشانی سمجھیں بلکہ اگر آپ دیکھیں کہ وہ کسی وجہ سے بہت مشکل اور مصیبت میں آگیا ہے.

خاوند کی عزت

ہمیشہ ایسے کام کرےکہ جس سے خاوند کی عزت بڑھے ۔ شوہر سے محبت کرنا سیکھے.

اگر خود بخود دل میں نہیں آتی تو اپنے آپ کو سمجھائے کہ اب میرا یہ خاوند ہے یہ میرا محبوب ہے اسی کی محبت میرے دل میں ہو گی تو میرا مالک مجھ سے راضی ہوگا.

انسان اپنی زندگی کے ا ندر کسی نہ کسی چیز سے محبت ضرور کر تا ہے ۔ اس آیت کی مدد سے اللہ رب العزت میا ں بیوی کے مابین بھی محبت پیدا فر ما دیتے ہے ۔گھر کے لڑائی جھگڑے آپس میں محبت نہ ہو نے کی وجہ سے ہوتے ہے ۔

گھر کی خوشیاں آپس میں محبت کی وجہ سے ہوتی ہے۔ نبی اکرم ﷺ نے فر ما یا جس کا مفہوم ہے کہ دین کا سب سے زیا دہ مظبوط عمل آپس میں محبت کر نا ہے ۔ اللہ رب العزت کیلیے آپس میں محبت رکھنا اللہ رب العزت کو بہت زیا دہ محبوب ہے۔

محبت پیدا کر نے کیلیے یہ پڑھیں

بے شک اللہ رب العزت محبت کرنے والوں کو پسند فر ما تے ہے لیکن اس کی شرط یہ ہے کہ یہ محبت جا ئز مقصد کیلیے ہوں ۔۔۔اس آیت کے پڑھنے سے اللہ رب العزت دلوں میں محبت پیدا فر ما دیتے ہے۔

یوسف اعرض عن ھذا واستغفری للذنبک انک کنت من الخا طئین وقال نسوۃ فی المدینتہ امرلتہ العزیز تراودفتھا ون نفسہ قد شغفھا حبا انا لنرھا فی ضلال مبین

یہ وظیفہ ہما رے بڑوں کا بتا یا ہوا ہے اور بہت ہے مجرب ہے۔
اللہ رب العزت ہمیں اس قرآنی وظیفے کو اہتما م کے ساتھ پڑ ھنے کی تو فیق عطا فر ما ئے اور ہما ری دنیا وی وآخروی مسا ئل کوحل فر ما ئے۔۔۔۔۔آمین ۔۔۔السلام علیکم و رحمتہ اللہ

Leave a Comment