اسلامک معلومات

ماچس کی تیلی میں سر تو ہوتا ہے، پر دماغ نھیں ہوتا

1) ماچس کی تیلی میں سر تو ہوتا ہے، پر دماغ نھیں ہوتا۔ اسی لیے ذرا سی رگڑ سے بھڑک تو اٹھتی ھے، پر انجام۔۔۔ اپنی ہی آگ میں جل کر خاک ہو جاتی ھے۔
حاسد کا بھی، کچھ ایسا ہی حال ہوتا ہے۔

2) مینڈک کو چاہے، سونےکی بنی کرسی پرہی بیٹھا دیں۔ پر وہ چھلانگ لگا کر واپس دلدل میں ہی جانا پسند کرتا ہے ۔۔۔پس اسی طرح کے کچھ انساں ہوتے ہیں، ان کو آپ جتنی مرضی عزت افزائی دیں۔۔۔ پر انھوں نے اپنے سلوک۔۔ اخلاق۔۔۔ اپنے برتاؤ سے اپنے آپ کو کم ظرف کرکے ہی رہنا ہوتا ہے۔3) جنازے میں شامل ہونے کے لیے لوگ دوسرے ملکوں سے بھی آسکتے ہیں، جبکہ فرض نماز کے لیے پاس کی مسجد میں بھی جانا مشکل لگتا ھے۔4) جب انسان اپنی غلطیوں کا (وکیل) اور دوسروں کی غلطیوں کا (جج) بن جائے تو فیصلے نہیں، (فاصلے )ہونے لگتے ہیں۔

5) ہمیں تو مردہ کو بھی سلام کہنے کی تعلیم دی گئی ہے ۔۔۔ پر پتہ نہیں، ہم میں یہ انا۔۔ ضد۔۔ اکڑ ۔۔ کیوں آ گئی ھے کہ زندہ لوگوں کو بھی سلام نہیں کرتے۔ اگر کرتے بھی ہیں، تو مطلب تک۔6) سب کو خوش رکھنا ایسا ہے، جیسے زندہ مینڈکوں کو تولنا۔ ایک کو بیٹھاؤ تو دوسرا پھُدک پڑتا ہے۔7) انسان جسم سے نہیں، اپنے اخلاق سے بڑا ہوتا ھے۔

Leave a Comment