قصص الانبیا ء

ماحول کی آلودگی اور اسلامی تعلیمات

ماحول کی آلودگی اور اسلامی تعلیمات ہمارے ماحول میں ایسے اجزاء کاشامل ہو جانا جو صحت کے لیے نقصان دہ ہوں ماحول کی آلودگی کہلاتا ہے۔ اسکو کو آلودہ کرنے میں فیکٹریوں سے نکلنے والا زہریلا مواد ہے.

روز بروز بڑھتی ہوئی ٹریفک گاڑیوں کا دھواں کوڑا کرکٹ ہے۔ گندگی کے ڈھیر کھادوں اور زہریلی ادویات کا غیر ضروری استعمال بطور جنگلات اور غیر ضروری کٹائی اور شہروں کی ابادی کے پھیلاؤ میں ناقص منصوبہ بندی شامل ہے. اسلا ماحول کو صاف رکھنے کی تاکید کی ہے. پاکیزگی کو اسلام میں بنیادی حیثیت حاصل ہے رہنے والوں کو پسند فرماتا ہے. اللہ تعالی کا ارشاد ہے اور اللہ تعالی پاک رہنے والوں کو پسند کرتا ہے. کہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے صفائی کو نصف ایمان قرار دیا ہے .

دینی فریضہ

ہمارا دینی فریضہ ہے کہ ہم نہ صرف خود کو پاک صاف رکھیں ۔بلکہ اپنے ماحول کو بھی آلودگی سے بچائے اور خوبصورت ماحول کی آلودگی کی مختلف صورتیں ہیں. جن میں سے چند یہ ہیں۔ صوتی آلودگی صوتی آلودگی سے مراد ایسے تمام آوازیں جو ہماری سماعت کو نقصان پہنچایا .وہ میں ذہنی طور پر پریشان کر سڑک پر چلنے والے ٹریفک کے شور خان کی آواز میں آبادی کے قریب کارخانوں میں مشینوں کی آوازیں ،ان کی آواز میں موسیقی لاؤڈ سپیکر کا غیر ضروری استعمال صوتی آلودگی کے اہم اسباب ہے.

صفائی کا خاص خیال

جس سے کئی نفسیاتی مسائل پیدا ہوتے ہیں. لوگ ذہنی اور اعصابی تناؤ کا شکار ہو جاتے ہیں .قرآن مجید میں ارشاد ہے اور اپنی آواز اور جس سے نمبرد آزما ہونے کے لیے ضروری ہے. کہ ہم صفائی کا خاص خیال رکھیں. شجرکاری کے موسم میں زیادہ سے زیادہ درخت لگائیں اور ان کی دیکھ بھال کریں . ہم ٹریفک قوانین کی پابندی کریں .تاکہ آلودگی کے پھیلاؤکو روکا جاسکے.

Leave a Comment