اسلامک معلومات

قرآن کریم ایک نور، ہدایت اورروشنی ہے

قرآن کریم ایک نور، ہدایت اورروشنی ہے

قرآن کیا ہے؟ اور ہم اسے کیا سمجھتے ہیں؟ قرآن جس اہمیت کا متحمل ہے کی ہم اسے وہ اہمیت دیتے ہیں؟آیے مختصر نظر ڈالتے ہیں۔

قرآن کریم پر ایمان رکھنے کا مطلب یہ ہے کہ ایک مسلمان کے اندر ان باتوں کا یقین محکم ہو کہ:

٭قرآن کریم اللہ تعالی کی نازل کردہ کتابوں میں سے آخری کتاب ہے ۔

٭جو ہمارے پیارے نبی محمد صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم پرجبرائیل عہ کے ذریعے نازل کی گئی ۔

٭چودہ سو سال پہلے جس طرح تھی آج بھی اسی حالت میں موجود ہے اور رہتی دنیا تک یوں ہی رہے گی۔اس میں ایک لفظ کابھی ردوبدل نہیں ہوا اور نہ کبھی ہوگا۔

  • ٭اللہ تعالی بذات خود اس کی حفاظت فرمارہے ہیں۔
  • ٭یہ کتاب ہمارے لیے ہدایت کا ذریعہ بن کر آئی ہے۔
  • کتاب کو پڑھنے اور سمجھنے کا علم حاصل کرنا ہر ایک مسلمان پر فرض ہے۔
  • ٭اس  پرعمل کرتے ہی اس کی برکات و ثمرات زندگیوں میں ظاہر ہونا شروع ہو جاتےہیں۔
  • ٭اس کتاب پر عمل ہی ہماری نجات کا ذریعہ ہے۔ ٭صرف یہی کتاب ہمارے آخری سفرمیں ہماری ساتھی ہوگی۔ ٭آخرت میں یہ کتاب یا تو ہمارے حق میں

حجت بنے گی یا ہمارے خلاف۔

اتنے مضبوط ایمان کے ساتھ جب ایک مسلمان قرآن پڑھنا چاہتا ہے تو اس کتاب کو .ہاتھ میں اٹھاتے ہی اس کا رعب و احترام اور محبت کا جذبہ دل میں گھر کر لیتا ہے اور جب وہ اس کو کھول کر پڑھتا ہے .تو سرسری انداز میں نہیں بلکہ طلب ہدایت کے لیے ، اپنی آخرت سوارنے کے لیے۔ورنہ اگر جیسے کوئی شخص بیمار ہو وہ طب کی کوئی کتاب لے کر بیٹھ جائے. اور یہ خیال کرے کہ محض کتاب پڑھنے سے اس کی بیماری دور ہوجائے گی تو ایسے شخص کو کوئی ذی شعور نہیں کہے گا۔بلکل اسی طرح ہمارا رویہ قرآن کریم کے ساتھ ہے. ہم اس قرآن کو اس خیال سے پڑھتے ہیں کہ اس کا صرف پڑھ لینا ہی کافی ہے .اور اس کے پڑھنے سے ہی ہماری تمام پریشانیاں اور روحانی امراض کا خاتمہ ہوجائے گا .,اسکو سمجھ کر پڑھنا ضروری نہیں ,جو کہ بہت غلط سوچ ہے۔

عملی جامہ پہنانے کی ہر ممکن کوشش

اگر ہمارے پاس کوئی ایسا خط آتا ہے جس کی زبان سے ہم ناواقف ہوں تو لازما ہماری فطرت یہ تقاضہ کرے گی کہ اس کا ترجمہ کروا کر یہ جاننے کی کوشش کہ اس میں کیا لکھا ہے؟ اور ہم اس بات کو عملی جامہ پہنانے کی ہر ممکن کوشش کریں گے۔یہ رویہ ہوگا ہمارا ایک معمولی خط کے ساتھ۔مگر اللہ تعالی کا جو پیغام ہمارے پاس آیا ہوا ہے جس میں ہمارے لیے دین و دنیا کے تمام فائدے موجود ہیں،اس کو جاننے ،سمجھنے کےلیے ہمیں کوئی فکر ،کوئی بے چینی لاحق نہیں ہوتی ؟سوچنے کا مقام ہے۔

بیماریوں کے علاج کے لیے

قرآن تو سراسر خیر ہے۔اسے اگر ہم جن بھوت بھگانے کے لیے کے لیے، تعویذ گنڈوں کے لیے، بیماریوں کے علاج کے لیے اور روزی میں برکت جیسی حقیر و بے حقیقت چیزوں کے لئے پڑھیں گے تو یہی ہمیں ملیں گی اور اگر ہدایت کے لیے اور جنت کے حصول کے لیے پڑھیں گے تو یہ بھی اللہ تعالی کی رحمت سے عین ممکن ہے۔یہ ہماراظرف ہے کہ ہم اللہ تعالی سے کیا مانگتے ہیں؟

رشتہ جوڑا وہ دنیا میں معزز

مسلمانوں نے جب بھی اس کتاب سے رشتہ جوڑا وہ دنیا میں معزز،سربلند،اور خوشحال ہوئے اور جب اسے صرف پڑھنے کی حد تک محدود کردیا تو ذلت و پسماندگی،حقارت و بے عزتی مقدر بنی۔( جیسا کہ ابھی موجودہ دور میں ہو رہا ہے

آج ہمارے پاس وہی قرآن ہے۔اس کے لاکھوں نسخے گردش میں ہیں گھروں اور مسجدوں میں اس کی صبح شام تلاوت کی جاتی ہے لیکن ہماری آنکھیں خشک رہتی

ہیں،دلوں پر اثر نہیں ہوتا، زندگیوں میں کوئی تبدیلی واقع نہیں ہوتی۔کیوں؟

قرآن کریم پڑھنے کے تجربے

آپ کی زندگی کا کوئی تجربہ،قرآن کریم پڑھنے کے تجربے سے زیادہ پر مسرت،عظیم،نفع بخش اور بابرکت نہیں ہوسکتا۔قرآن میں آپ کو علم و دانش کے ناقابل بیان خزانوں کا ایک جہان ملے گا. جو زندگی کی شاہرہ پر آپ کی رہنمائی کرے گا۔

آیات کا نور

قرآن کی آیات کا نور آپ کو لاعلمی کے اندھیروں سے نکال کر آپ کی روح کی گہرائیوں تک کو منور کردے گا۔قرآن سے آپ ایسی جزباتی وابستگی محسوس کریں گے جو آپ کے سخت دل کو پگھلا دے گی اور بے اختیار اللہ تعالی کی محبت میں آپ کے آنسو بہنے لگیں گے۔اب اگلے قدم پر قرآن آپ سے تقاضہ کرے گا کہ
آپ اللہ تعالی ہی کہ ہو جائیں اور اس قدم پر قرآن کا یہ تقاضہ آپ کے اپنے دل کی آواز ثابت ہوگا اور آپ اپنی آزاد مرضی اور اللہ تعالی کی محبت میں سرشار ہو کر اپنے آپ کو اللہ تعالی کے قدموں میں دے دیں گے۔

شرو باطل قوتوں کے مقابلے

اس دنیا میں شرو باطل قوتوں کے مقابلے کے لیے اور اپنے خوف و پریشانیوں کو قابو کرنے کے لیے یہی واحد ذریعہ ہے۔قرآن مجید سے آپ کو اپنے دن اور رات کے مسائل کے حل بھی ملیں گے اور ڈپریشن اور مشکلات میں یہ کلام آپ کو قلبی اور روحانی سکون بھی عطا کرے گا۔

Leave a Comment