اسلامک معلومات

قرآن مجید میں 6 مقامات پر سکینت کا ذکر ہے

قرآن مجید میں 6 مقامات پر سکینت کا ذکر ہے

 

ابن القیم رحمة اللہ‎ علیہ سکینت کے مرتبہ کی شرح کرتے ہوے کہتے ہیں:

 

یہ اللہ‎ کے عطا کئے گے رتبوں میں سے ایک رتبہ ہے۔یہ رتبہ انسان کی ذاتی محنت اور کسب سے نہیں ہوتا۔

قرآن مجید میں 6 مقامات پر سکینت کا ذکر ہے:
ایک سورة البقرة میں (248)
دو بار سورة التوبہ میں(26,40)
تین بار سورة الفتح میں (26,18,4)

 

▪جب انسان ان آیات کو سنتا اور پڑھتا ہے تو شیطانی حملوں اور بیماریوں سے نجات پاتا ہے۔
▪ابن القیم کہتے ہیں کہ ابن تیمیہ رحمة اللہ‎ پر جب معاملات شدت اختیار کر جاتے تو وہ سکینت والی آیات پڑھتے اور میں نے انکو ایک بہت عظیم واقعہ بیان کرتے ہوئے سنا جو انکی بیماری میں پیش آیا وہ اسکو برداشت کرنے سے عاجز تھے۔

یہ شیطانی روحوں سے جنگ کرنے اور ان سے مقابلہ کرنے کا واقعہ ہے کہ جب انکی قوت کمزور ہو گئ تو انکے سامنے شیطانی روحیں ظاہر ہو گئیں جب معاملہ ان پر شدت اختیار کر گیا تو انہوں نے اپنے رشتے داروں سے کہا کہ مجھ پر سکینت والی آیات پڑھو پھر وہ حالت ان پر سے ختم کر دی گئی اور وہ بیٹھ گئے اور کوئی بیماری نہ رہی۔
▪کسی بھی پریشانی کے وقت ان آیات کا پڑھنا سکون کا باعث ہے۔
▪بےقراری اور بےچینی کو دور کرتی ہے۔
▪ایمان میں اضافے کا باعث ہے۔

Leave a Comment