معلومات عامہ

عاجزی ہی بہترین انتخاب ہے، یوسف خان عرف دلیپ کمار

دلیپ کمار کہتے ہیں "اپنے کیرئیر کے عروج پر ایک بار میں جہاز سے سفر کر رہا تھا. میرے ساتھ والی سیٹ پر ایک بڑی عمر کا بندہ بیٹھا تھا جس نے سادہ سی شرٹ اور پینٹ پہن رکھی تھی اور حلیے سے ہی مڈل کلاسیا مگر اچھا پڑھا لکھا شخص لگ رہا تھا. دوسرے مسافر تو شاید مجھے پہچان رہے تھے اور سرگوشیاں کر رہے تھے، تاہم اس بندے کو تو جیسے میری موجودگی سے کوئی سروکار ہی نہیں تھا. وہ اخبار پڑھ رہا تھا کھڑکی سے باہر دیکھ رہا تھا اور جب چائے پیش کی گئی تو خاموشی سے اسکی چسکیاں لینے لگا. اس سے گفتگو کی کوشش میں میں نے اس کی طرف مسکرا کر دیکھا اس شخص نے بھی ازروئے مہربانی واپسی مسکراہٹ دکھائی اور مجھے ہیلو کہا. ہماری گفتگو شروع ہو گئی اور میں نے موضوع سینما اور فلم کی طرف موڑ دیا اور اس سے پوچھا 'آپ فلمیں دیکھتے ہیں؟ '

دلیپ کمار کہتے ہیں “اپنے کیرئیر کے عروج پر ایک بار میں جہاز سے سفر کر رہا تھا. میرے ساتھ والی سیٹ پر ایک بڑی عمر کا بندہ بیٹھا تھا جس نے سادہ سی شرٹ اور پینٹ پہن رکھی تھی اور حلیے سے ہی مڈل کلاسیا مگر اچھا پڑھا لکھا شخص لگ رہا تھا. دوسرے مسافر تو شاید مجھے پہچان رہے تھے اور سرگوشیاں کر رہے تھے، تاہم اس بندے کو تو جیسے میری موجودگی سے کوئی سروکار ہی نہیں تھا. وہ اخبار پڑھ رہا تھا کھڑکی سے باہر دیکھ رہا تھا اور جب چائے پیش کی گئی تو خاموشی سے اسکی چسکیاں لینے لگا. اس سے گفتگو کی کوشش میں میں نے اس کی طرف مسکرا کر دیکھا اس شخص نے بھی ازروئے مہربانی واپسی مسکراہٹ دکھائی اور مجھے ہیلو کہا. ہماری گفتگو شروع ہو گئی اور میں نے موضوع سینما اور فلم کی

طرف موڑ دیا اور اس سے پوچھا ‘آپ فلمیں دیکھتے ہیں؟ ‘
اس شخص نے جواب دیا ‘اوہ بہت کم. کئی سال پہلے ایک فلم دیکھی تھی. ‘
میں نے بتایا کہ میں فلم انڈسٹری میں کام کرتا ہوں.
وہ شخص جواباً بولا ‘اوہ بہت خوب. آپ کیا کرتے ہو؟ ‘
‘میں اداکار ہوں ‘ میں نے جواب دیا.
اس شخص نے سر ہلایا ‘واہ یہ تو زبردست ہے’ اور بس گفتگو ختم ہو گئی.

جب ہم لینڈ کر گئے تو میں نے ہاتھ بڑھا کر اس سے مصافحہ کرتے ہوئے کہا ‘آپ کے ساتھ سفر کرنا اچھا لگا. ویسے میرا نام دلیپ کمار ہے ‘
اس شخص نے مجھ سے مصافحہ کیا اور مسکرایا’ آپکا شکریہ. آپ سے مل کر بہت خوشی ہوئی. میں جے آر ڈی ٹاٹا ہوں….. ٹاٹا گروپ آف کمپنیز کا چیرمین….. ”
دلیپ کمار کہتے ہیں اس دن میں نے جانا کہ فرق نہیں پڑتا کہ آپ کون ہیں اور کتنے نامور ہیں. کچھ بھی ہوجائے آپ سے زیادہ کامیاب اور نامور لوگ دنیا میں موجود رہیں گے

سو عاجزی ہی بہترین انتخاب ہے۔

Leave a Comment