اسلامک معلومات

دعا کی فضیلت بیان فرماتے ہوئے اسے مومن کا ہتھیار قرار دیا ہے

دعا کی فضیلت

دعا کی فضیلت
نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم نے دعا کی فضیلت بیان فرماتے ہوئے اسے مومن کا ہتھیار قرار دیا ہے۔

قرآن مجید میں بہت سے انبیاء کرام علیہ السلام کی دعاؤں کا ذکر ہے۔ جن میں حضرت آدم علیہ السلام حضرت نوح علیہ السلام حضرت ابراہیم علیہ السلام ۔۔حضرت موسی علیہ السلام اور حضرت یونس علیہ السلام کی دعائیں خاص طور پر قابل ذکر ہیں.
حضور اکرم صلی اللہ علیہ وسلم یہ دعاکثرت سے مانگا کرتے تھے۔ اے ہمارے پروردگار ہم کو دنیا میں بھی نعمت عطا فرما اور آخرت میں بھی نعمت عطا فرما ۔

دوزخ کے عذاب سے محفوظ

دوزخ کے عذاب سے محفوظ رکھ کوئی دعا اللہ تعالی کی کسی حکمت کے تحت درجہ قبولیت حاصل نہ کرے ۔۔

تو اللہ تعالی قیامت کے روز اس دعا کا بہترین بدلہ عطا فرما دے گا اللہ تعالی سے دعا نہ مانگنا تکبر کے مترادف ہے۔ تو بول شیطانی صفت ہے جسے اللہ تعالی ناپسند کرتا ہے ۔’

حاجت اور ضرورتوں کے وقت

نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کا ارشاد ہے ۔کہ اللہ تعالی اس شخص سے ناراض ہو جاتا ہے جو اپنی حاجت اور ضرورتوں کے وقت اس سے دعا نہیں کرتا اللہ تعالی کے مقبول بندے اور پیغمبر دکھ تکلیف مصیبت اور آزمائش کے وقت اپنے رب کے حضور اپنی حاجات پیش کرتے رہے۔

اس کی نعمتوں کا شکر بجا لاتے مشکل حالات میں اور آخرت میں کامیابی کے لیے دعائیں مانگتے رہے

آداب دعا

 

اللہ تعالی کی بارگاہ میں دعا مانگنے کے کچھ آداب درج ذیل ہیں بہتر ہے کہ دعا باوضو ہو کر مانگی جائے۔ دعا قبلہ رو ہو کر مانگی جائے ۔دعا کے وقت لیا کرو خطرے کی جانب ہو ۔ اس کے بعد چہرے پر ہاتھ پھیرنا لئے دعا میں سب سے پہلے اللہ تعالی کی خوب حمد و ثنا بیان کی جائے ۔

پھر نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم پر درود شریف پڑھا دے ۔اس کے بعد اپنے لیے دعا مانگی جائے۔ دعا کرتے وقت پورا دھیان اللہ تعالی کی طرف رہے ۔ ۔۔دعا انتہائی عاجزی اور خشوع و خضوع سے مانگی جائے دل میں پختہ یقین رکھا جائے اللہ تعالیٰ اس کو ضرور قبول کرے گا اگر دعا فورا قبول نہ ہو تو بے صبری کا مظاہرہ نہ کیا جائے بلکہ بار بار دعا کی جائے

Leave a Comment