اسلامک واقعات

خشیت الہی کیا ہے؟ مسلمان کی زندگی میں خشیت الہی ہونا کیوں ضروری ہے؟

خشیت کے معانی “ڈر” کے ہیں-تو خشیت الہی سے مراد ہے اللہ کا ڈر-دل میں اللہ کا ڈر کیوں ضروری ہے؟اسی لیے کیونکہ اللہ کا ڈر ہمارے ایمان کو مضبوط بنائے رکھتا ہے-ہم بہت سے برے کاموں سے اسی لیے بچ جاتے ہیں کیونکہ ہمارے دلوں میں اللہ کا خوف ہوتا ہے-جب ہم کوئی برا کام کرنے لگتے ہیں تو ہمارے زہن میں پہلا خیال یہی آتا ہے کہ اللہ تعالی ناراض ہونگے-اور مجھے میرے گناہ کی سزا دی جائے گی مجھے آگ میں ڈالا جائے گا اس لیے ہم گناہ کرنے سے بچ جاتے ہیں-ایمان کے مضبوط ہونے کے ساتھ ساتھ خشیت الہی بہت ضروری ہے-اللہ تعالی کا فرمان ہے:

“اگر تم اللہ سے ڈرو گے تو اللہ تعالی تم کو ایک امتیاز عطا فرمائے گا اور تمھارے گناہ تم سے دور کر دے گا اور تمھاری مغفرت فرمائے گا”- اس آیت سے ظاہر ہوتا ہے جب تک ہمارے دلوں میں اللہ کا ڈر ہوگا تو ہم گناہ سے بچے رہیں گے-گناہ اور ظلم وہی کرتا ہے جس کے دل میں اللہ کا خوف نہیں ہوتا وہ اپنے انجام سے بے خبر ہوتا ہے اس کو لگتا ہے وہ ہمیشہ ہی رہے گا کبھی موت اس تک نہیں پہنچے گی ایسے لوگوں کے لیے اللہ نے درد ناک عذاب تیار کر رکھا ہے-خشیت الہی پر ایک حدیث بھی ہے “رب العالمین سے میں تم سب سے زیادہ ڈرنے والا ہوں! میں تم میں سے سب سے زیادہ پرہیز گار ہوں لیکن اگر میں روزر رکھتا ہوں تو افطار بھی کرتا ہوں-نماز پڑھتا ہوں اور سوتا بھی ہوں اور میں عورتوں سے نکاح کرتا ہوں-میرے طریقے سے جس نے بے رغبتی کی وہ مجھ میں سے نہیں” اسی لیے ایمان کے مضبوط ہونے کے ساتھ ساتھ اللہ کا خوف بے حد ضروری ہے جس سے ہم کبھی اپنی راہ سے نہیں بھٹکیں گے-

Leave a Comment