اسلامک واقعات

خاتونِ جنت ۔ حضرت فاطمہ ؓ  کی وفات

خاتونِ جنت  کی وفات

خاتونِ جنت ۔ حضرت فاطمہ ؓ  کی وفات  کا وقت اور غسل

خاتونِ جنت کا انتقال مغرب اور عشاء کے درمیان ہوا۔ حضرت فاطمہ رضی الل عنہ نے حضرت ابو بکر صدیق
رحمت الل علیہ کی زوجہ محترمہ کو نصیحت کی تھی کہ وہ انہیں غسل دیں۔ چناچہ اسماء بنت عمیر رضی الل عنہ نے ان کے غسل
کا انتظام فرمایا۔ غسل اور کفن کے بعد جنازے کا مسئلہ پیش آیا ۔ اس موقعے پر حضرت عمر فاروق رضی الل عنہ، حضرت ابو بکر صدیق رضی الل عنہ اور دیگر اصحاب جو اس موقعے پر موجود تھے تشریف لائے۔

حضرت فاطمہ رضی الل عنہ کا جنازہ

حضرت علی رضی الل عنہ کو دیکھ کر حضرت ابو بکر صدیق رضی الل عنہ نے فرمایا کہ آپ آگے تشریف لائیں اور جنازہ پڑھائیں۔ اس پر حضرت علی رضی الل عنہ نے فرمایا آپ خلیفہ رسول ہ یں آپ جنازہ پڑھائیں۔ چناچہ حضرت ابو بکر صدیق رضی الل عنہ نے نماز جنازہ پڑھائی۔ جنازے کے بعد حضرت فاطمہ رضی الل عنہ کو جنت البقع میں دفن کیا گیا ۔

خاتونِ جنت۔ حضرت فاطمہ ؓ  کو دفن کرنے کے بعد

حضرت فاطمہ ؓ  کو دفن کرنے کے بعد حضرت علی رضی الل عنہ نے فرمایا آج فاطمہ کو دفن کرنے بعد مجھ پر یہ بات کھل گئی ہے کہ کوئی کسی کا ساتھ نہیں دے سکتا۔ علی اور فاطمہ کے بعد کیا ایسا کوئی حسین جوڑا آیا ہے؟ ایک دفعہ حضرت علی نے حضرت فاطمہ سے کہا تھا میں جا رہا ہوں تو حضرت فاطمہ رضی الل عنہ رونے لگیں۔ پھر حضرت علی رضی الل عنہ نے کان میں کہا نہیں نہیں تم غم نا کرو سب سے پہلے تو ہی مجھ س ے آ کر ملے گی۔ پھر حضرت فاطمہ رضی الل عنہ ہسنیں لگیں۔اب علی کہہ رہے ہیں دیکھو دیکھو میں نے انہیں ہاتھوں سے رسول الل صلی الل علیہ وسلم کو قبر میں اتارا تھا۔ اور آج انہی ہاتھوں سے میں نے فاطمہ کو اتار دیا۔

جنت کی عورتوں کی سردار

رسول الل صلی الل علیہ وسلم نے فرمایا۔  اگر جنت میں عورتوں کی سردار ہوئیں تو وہ فاطمہ رضی الل عنہ ہوں گی۔ فاطمہ رضی
الل عنہ کا جب آخری وقت تھا پیشانی کے اوپر پسینہ ہے۔  اپنے بستر پ ر لیٹی ہیں اور بخار زوں پر ہے۔ اور حضرت علی سے کہتی ہیں معلوم نہیں جب سے میں آپ کے نکاح میں آئی ہوں میری وجہ سے آپ کو کتنا دکھ اٹھانا پڑا ہے لیکن میرے مرنے سے
پہلے مجھے معاف کر دیں۔

تاکہ قیامت کے روز مجھے میرے والد کے سامنے شرمندہ نا ہونا پڑے۔ مجھے معاف کر دیں۔حضرت
فاطمہ رضی الل عنہ کی آخری وصیت حضرت علی رضی الل عنہ سے یہ تھی کہ جب میرا انتقال ہو جائے تو پردے کا خیال رکھنا ۔
میرے والد نے کہا تھا اے فاطمہ پردے میں رہنا۔ میں آپ سے ایک سوال کرتی ہوں کہ کیا آج ہم اس قابل ہیں کہ ایسی با پردہ حضرت فاطمہ رضی الل عنہ کا، عظیم ہمارے پیارے نبی صلی الل علیہ وسلم کا سامنا کر سکیں

Leave a Comment