اسلامک واقعات

حضرت عمر رضی اللہ عنہ کے زمانے کا ایک خوبصورت پرہیز گار نوجوان

حضرت عمر رضہ اللہ عنہ کے زمانے میں ایک نوجوان تھا جو کہ بہت خوبصورت تھا اور بہت پرہیز گار بھی تھا-وہ زیادہ تر اپنا وقت مسجد میں گزارتا تھا اور اللہ کی عبادت میں مشغول رہتا تھا- حضرت عمر رضی اللہ عنہ کو وہ نوجوان بہت پسند آیا-اس نوجوان کا ایک بڑھا باپ بھی تھا-وہ نوجوان عیشاء کے بعد روز اپنے باپ سے ملنے جایا کرتا تھا-اسی راستے میں ایک عورت کا مکان بھی آتا تھا-

اس عورت کی جب اس نوجوان پر نظر پڑی تو وہ عورت اس نوجوان کی طرف راغب ہوگئی اور اسے بہکانے لگی-وہ نوجوان جب بھی اس کے گھر کے سامنے سے گزرتا تو وہ عورت گھر کے دروازے پر ہی کھڑی ہوتی اور اسے ادائیں دکھا دکھا کر اپنی طرف لبھاتی تھی چانچہ وہ نوجوان اس عورت کی طرف مائل ہوگیا-اور ایک رات وہ اس کے دروازے پر جا کھڑا ہوا-عورت پہلے گھر میں داخل ہوئی اور وہ نوجوان اس عورت کے پیچھے داخل ہوا-جیسے ہی نوجوان گھر میں داخل ہوا تو اسے اچانک اللہ تعالی کی یاد آئی اور بے ساختہ ہی ایک آیت اس کے زہن میں آئی جس کا ترجمہ یہ ہے:”بے شک جو لوگ خدا سے ڈرتے ہیں جب شیطان انہیں چھوتا ہے تق وہ چونک جاتے ہیں اور ان کی آنکھیں کھل جاتی ہیں اور یہ آیت پڑھتے ہی وہ نوجوان غش کھا کر زمین پر گر پڑا-جب عورت باہر آئی اور نوجوان کو بے ہوش پایا تو وہ گھبرا گئی-اسے اپنے اوپر الزام لگنے کا خوف آیا تو اس نے اپنے لونڈی کی مدد سے نوجوان کو اس کے گھر کے باہر ڈال دیا-گھر میں بوڑھا باپ اپنے بیٹے کے انتظار میں بیٹھا تھا-جب بہت دیر ہوگئی تو باپ بیٹے کو ڈھونڈنے نکل پڑا

اور جب بیٹے کو دروازے کے باہر پڑا پایا تو اپنے رشتہ داروں کی مدد اسے اندر لے کر گیا-جب بیٹا ہوش میں آیا تو اس کے باپ نے اس سے پوچھا کہ کیا ہوا تھا؟ بیٹے نے ساری تفصیل بتا دی-باپ نے پوچھا وہ کون سی آیت تھی جو تم نے اس وقت پڑھی تھی؟بیٹے نے وہ آیت پڑھ کر سنائی اور پھر سے بے ہوش ہو گیا جب اسے ہلایا گیا تو پتا چلا وہ مر چکا ہے-اور پھر اسے رات میں ہی دفن کر دیا گیا-جب حضرت عمر رضی اللہ عنہ کو اس نوجوان کی موت کی خبر ملی تو وہ تعزیت کرنے چلے آئے اور یہ شکوہ بھی کیا کہ ان کی کیوں نا بتایا گیا تو بوڑھے باپ نے کہا امیر المومینن زیادہ رات ہونے کی وجہ سے اطلاع نا دے سکے-پھر حضرت عمر رضی اللہ عنہ اس نوجوان کی قبر پر گئے اور فرمایا:”اور اس شخص کے لیے جو خدا سے ڈرتا ہے دو باغ ہیں”پھر اس نوجوان کی قبر سے آواز آئی- ” اے عمر رضی اللہ عنہ اللہ نے مجھے دونوں جنتیں دے دیں ہیں”

Leave a Comment