قصص الانبیا ء

حضرت اسماعیل علیہ السلام ایک برس تک اسی جگہ پرکھڑے اس کے منتظر رہے .اس لئے اللہ تعالی نے……

بیان حضرت اسماعیل علیہ السلام:

تاریخ سے یہ بات ظاہر ہوتی ہے کہ حضرت اسماعیل علیہ السلام ہر سال مکے شریف سے اپنے والد بزرگوار کی زیارت کو ملک شام جاتے تھے اور وہاں حضرت اسحاق اور دوسرے بھائیوں کو دیکھ کر پھر مکہ شریف تشریف لے جاتے تھے اور حضرت اسماعیل علیہ السلام کی بیوی مکے کے شریفوں میں سے تھی اور ان سے بارہ بیٹے تولد ہوئے.

ایک روز اچانک حق تعالی کی طرف سے اشارہ ہوا کہ اسماعیل تم مغرب کی زمین میں جاؤ اور وہاں کے بت پرستوں کو اللہ تعالی کی طرف بلاؤ اور دعوت الی لحق دو . چنانچہ یہ حکم خداوندی پاتے ہی فورا آ گئے اور تقریبا 50 برس تک خلق اللہ کو ہدایت کی. یہاں تک کہ تمام بت پرست مومن ہوگئے ترجمہ: اور یاد کر کتاب میں اسماعیل علیہ السلام کو کہ وہ اپنے وعدے میں سچا تھا اور اپنے رب کے پاس پسندیدہ یعنی حضرت اسماعیل علیہ السلام نے ایک شخص سے وعدہ کیا تھا کہ جب تک تو واپس نہ آؤگےمیں اسی جگہ پر ٹھہرا رہوں گا۔ اور وہ شخص تقریبا ایک سال تک نہ آیا. حضرت اسماعیل علیہ السلام ایک برس تک اسی جگہ پر اس کے منتظر رہے .اس لئے اللہ تعالی نے ان کو صادق الوعد فرمایا .اور عمر شریف حضرت اسماعیل علیہ السلام کی 123 برس کی ہوئی تھی. آخر عمر تک مکے میں ہی رہے اور بعض راو یوں نے کہا ہے کہ آخر عمر مکہ سے ملک شام تک میں تشریف لے گئے اور وہاں جاکر دیکھا کہ حضرت اسحاق نابینا ہو گئے اور ان سے دو بیٹے تولد ہوئے ہیں جن کے نام عیص اور یعقوب ہیں اور آپ کی ایک بیٹی بھی تھی اس کا نام تسمیہ تھا .

حضرت عیص کے ساتھ اس کا بیاہ کر دیا تھا اور حضرت اسحاق کو وصیت کرکے پھر مکہ میں تشریف لے گئے اور اس واقعہ کے ایک برس بعد انتقال فرمایا اور حضرت کے پہلو میں دفن کیے گئے بعد اس کے ان کے بیٹے ہر ایک ملک میں متفرق ہوگئے مگر دو بیٹے ایک ثابت دوسرے کے قیدار دونوں مکے میں ہی رہ گئے اور بشیتر اہل عرب اور اعجاز ان ہی کی نسل سے ہیں.

Leave a Comment