دلچسپ وعجیب قصص الانبیا ء

جب جاب مل گئی۔۔دلچسپ و عجیب تحریر

جاب مل

عابد کافی عرصے سے بہت پریشان تھا اور گھر والوں سے لڑ جھگڑ کر علیحدہ رہ رہا تھا۔ برا وقت چل رہا تھا کہ اس کی اپنے باس سے بھی لڑائی ہو گئی اور جاب سے بھی ہاتھ دھو بیٹھا۔ کافی دنوں سے وہ ایک سستے سے ہاسٹل میں زندگی بسر کر رہا تھا اور اپنے کپڑے تک خود دھو رہا تھا۔ ایک دن اس کے باس کو خبر ہوئی کہ اس کے حالات اتنے پتلے ہیں کہ بیچارہ گلیوں سڑکوں کی خاک چھان رہا ہے اور اسے رہ رہ کر عابد کا خیال آنے لگا کہ

بیچارہ اللہ جانے کیسے گزارہ کر رہا ہو گا۔ اس نے عابد کو آفس میں بلوایا اور اسے بتایا کہ وہ پھر سے اپنی جاب شروع کر سکتا ہے۔ عابد بہت خوش ہوا۔ اس نے عابد کو سپلائیز کے لیے کچھ پیسے دیے اور بولا کہ سامان لے کر سیدھا آفس آ جائے۔ عابد کی نیت خراب ہو گئی اور اس نے وہ سارےپیسے اپنی ذاتی اشیاء خریدنے پرخرچ کر دیے۔ جب وہ رات تک آفس نہ لوٹا تو اس کے باس کو اس پر شدید غصہ آیا۔وہ سمجھ گیا کہ عابد اتنا غیر ذمہ دار ہے پھر پیسے کہیں ضائع کر دیے ہوں گے ۔ لیکن وہ ایک نیک آدمی تھا اس نے عابد کو اگلے دن فون کیا، ڈر کے مارے عابد اس کی کوئی کال نہیں اٹھا رہا تھا۔ لیکن اس کا باس اسے روز کال کرتا رہا اور اس نے ارادہ کر لیا تھا کہ اس بے وقوف کو اپنی زندگی برباد نہیں کرنے دینی۔ اللہ واسطے اس نے عابد کو پھر سے آفس بلایا اور اس سے ان پیسوں کا کوئی تذکرہ نہیں کیا اور عابد کو مزید پیسے دے کر اس پر اعتبار کر کے اس کو سپلائیز لانے کے لیے بھیج دیا۔ عابد بہت شرمندہ ہوا اور اس کا ضمیر اسے مسلسل ملامت کر رہا تھا، اس نے جا کر سارا ضروری سامان خریدا اور آفس وقت پر پہنچ گیا۔ اس کی اس دفعہ کی کارکردگی دیکھ کر اس کا باس بہت خوش ہوا اور سمجھ گیا کہ عابد اب اپنی اصلاح کی راہ پر گامزن ہے اور آئندہ صرف اپنی بہتری کی سعی کرے گا۔ کہتے ہیں کہ اللہ اس پر رحم کرتا ہے جو اس کی مخلوق پر رحم کرتے ہیں۔ اپنے دل کو کبھی سخت نہ کرو اور دوسرے لوگوں سے کبھی بھی نا امید مت ہو۔ اکثر وہ بچے جن کو گھر والے ہر وقت پابندیوں میں جکڑے رکھتے ہیں اور گھر کی چار دیواری میں قید رکھتے ہیں، جب ان کو موقع ملتا ہے تو

وہ شدید ترین بغاوت کرتے دکھائی دیتے ہیں۔ اسی کے برعکس جو لوگ اپنے بچوں کو مکمل آزادی دیتے ہیں، ان کے بچے ہر طرح کا غلط کام ہوتے دیکھ دیکھ کر خود ایسی چیزوں سے کنارہ کشی اختیار کر لیتے ہیں۔ جب آپ یہ جانتے ہیں کہ کسی اور نے آپ پر اعتبار کیا ہوا ہے تو آ پ کا ضمیر آپ کو راہ سے ہٹنے نہیں دیتا۔ یہ ایک عام سی بات ہے کہ ا نسان جس سے بہت امیدیں لگاتا ہے، وہ اس کی امیدوں پر ہمیشہ پورااتر تا ہی ہے۔لوگوں کی غلطیوں کو درگزر کرنا سیکھیں اوریاد رکھیں کہ اللہ محسن کو بہت پسند کرتا ہے

Leave a Comment