قصص الانبیا ء

تشہد میں رفع سبابہ یعنی شہادت والی انگلی کو حرکت دینا سنت ہے۔

نماز کے دوران قعدے میں بیٹھ کر دعائیں پڑھتے ہوئے شہادت کی انگلی کو آہستہ سے مسلسل حرکت دینا رفع سبابہ کہلاتا ہے۔ نبی ﷺ جب نماز میں بیٹھتے تو اپنے دونوں ہاتھ اپنے دونوں گٹھنوں پر رکھ لیتے اور انگوٹھے کے ملنے والی دائیں ہاتھ کی انگلی ( شہادت کی انگلی ) اٹھا کر اس سے دعا کرتے اور اس حالت میں آپکا بایاں ہاتھ آپکے بائیں گٹھنے پر ہوتا[ صحیح مسلم: 1309 ]

سیدنا عبد اللّٰه بن زبیر رضی اللّٰه عنہ روایت کرتے ہیں کہ رسول اللّٰه ﷺ جب (نماز میں) تشہد پڑھنے بیٹھتے تو اپنا دایاں ہاتھ دائیں اور بایاں ہاتھ بائیں ران پر رکھتے اور شہادت کی انگلی کے ساتھ اشارہ کرتے اور اپنا انگوٹھا اپنی درمیانی انگلی پر رکھتے۔[ صحیح مسلم : 1307 ]نبی اکرم ﷺ دائیں ہاتھ کی تمام انگلیاں بند کر لیتے، انگوٹھے کے ساتھ والی انگلی سے اشارہ کرتے۔[ صحیح مسلم : 1309 ]وائل بن حجر رضی اللّٰه عنہ روایت کرتے ہیں کہ رسول اللّٰه ﷺ ( دوسرے سجدے سے اٹھ کر ) قعدہ میں بیٹھے، دو انگلیاں بند کیں (انگو ٹھے اور درمیان کی بڑی انگلی سے) حلقہ بنایا اور انگشت شهادت سے اشارہ کیا[ سنن ابی داود : 726 ]وائل بن حجر رضی اللّٰه عنہ فرماتے ہیں کہ رسول اللّٰه ﷺ نے انگلی اٹھائی اور آپ اسے ہلاتے تھے۔[ سنن نسائی : 890 ] صرف لَا إِلٰهَ إِلَّا اللّٰه کہنے پرانگلی اٹھانا اور کہنے کے بعد رکھ دینا کسی روایت سے ثابت نہیں ہے۔ تشہد میں شہادت کی انگلی میں تھوڑا سا خم ہونا چاہیے۔[ سنن ابی دواد : 991 ]رسول اللّٰه ﷺجب تشہد میں بیٹھتےتو اپنا بایاں ہاتھ اپنے بائیں گٹھنے پر رکھتے اور اپنا دایاں ہاتھ اپنے دائیں گٹھنے پر رکھتے اور انگلیوں سے تریپن ( 53 ) کی گرا بناتے اور انگشت شہادت سے اشارہ کرتے ۔

[صحیح مسلم: 1310 ] جب آپ ﷺ نماز میں بیٹھتے تو اپنی دائیں ہتھیلی اپنی دائیں ران پر رکھتے اورسب انگلیوں کو بند کر لیتے اور انگوٹھے کے ساتھ والی انگلی سے اشارہ کرتے اور اپنی بائیں ہتھیلی کو اپنی بائیں ران پررکھتے ۔[ صحیح مسلم : 1311 ] آپ جب نماز میں بیٹھتے تو اپنی دائیں ہتھیلی کو ( دائیں ) ران پر رکھتے اور اپنی تمام انگلیاں بند کر لیتے اور اس انگلی سے اشارہ فرماتے جو انگوٹھے کے ساتھ ملتی ہے اور اپنا بایاں ہاتھ اپنی بائیں ران پر رکھتے ۔[ سنن النسائی : 1268 ] ان سب روایات سے علم ہوتا ہے کہ تشہد میں بیٹھنے کے بعد نبی ﷺ اپنی شہادت کی انگلی سے اشارہ کرتے اور اسکو حرکت دیتے اور ساتھ میں دعائیں پڑھتے۔ یہ اشارہ کرنا اور انگلی کو ہلانا قعدۂ اولیٰ کی دعا کے ساتھ ہی شروع کر دیتے کیونکہ تشہد میں بیٹھنے کے بعد سب سے پہلی دعا یہی ہے۔ اور ایک اور بات کہ صرف اشھہد الا الہ الا اللّٰه پر اگلی اٹھانا کسی روایت سے بھی ثابت نہیں ہے ۔ اسلیے اپنی انگلی کو مسلسل حرکت دیں۔

Leave a Comment