اسلامک معلومات

اے اللہ ! ہم آگ سے تیری پناہ چاہتے ہیں۔

السلام عليكم ورحمة الله وبركاته

بسم الله الرحمن الرحيم

جہنم میں بعض گناہوں کے مخصوص عذاب

تنگ منہ والے تنور میں ڈالا جانا (زنا کرنے والے مرد اور زنا کرنے والی عورتوں کی سزا)
عَنْ سَمُرَةَ بْنِ جُنْدَبٍ قال ۔۔۔۔ قَالَ رَأَيْتُ اللَّيْلَةَ رَجُلَيْنِ أَتَيَانِي فَأَخَذَا بِيَدِي فَأَخْرَجَانِي إِلَى الْأَرْضِ الْمُقَدَّسَةِ۔۔۔۔ فَانْطَلَقْنَا إِلَى ثَقْبٍ مِثْلِ التَّنُّورِ أَعْلَاهُ ضَيِّقٌ وَأَسْفَلُهُ وَاسِعٌ يَتَوَقَّدُ تَحْتَهُ نَارًا فَإِذَا اقْتَرَبَ ارْتَفَعُوا حَتَّى كَادَ أَنْ يَخْرُجُوا فَإِذَا خَمَدَتْ رَجَعُوا فِيهَا وَفِيهَا رِجَالٌ وَنِسَاءٌ عُرَاةٌ فَقُلْتُ مَنْ هَذَا قَالَا ۔۔۔۔ وَالَّذِي رَأَيْتَهُ فِي الثَّقْبِ فَهُمْ الزُّنَاةُ. [صحیح البخاری:1386] سمرہ بن جندب رضی اللہ عنہ سے روایت ہے وہ کہتے ہیں کہ … نبی ﷺ نے فرمایا: آج رات میں نے ایک خواب دیکھا کہ دو آدمی میرے پاس آئے۔ انہوں نے میرے ہاتھ تھام لیے اور وہ مجھے ارض مقدس کی طرف لے گئے۔ (پھر عالم بالا لے گئے) ۔۔۔۔
• چنانچہ ہم آگے بڑھے تو ایک تنور جیسے گڑھے کی طرف چلے۔ جس کے اوپر کا حصہ تو تنگ تھا لیکن نیچے سے خوب فراخ تھا اور نیچے آگ بھڑک رہی تھی۔
• جب آگ کے شعلے بھڑک کر اوپر کو اٹھتے تو اس میں جلنے والے لوگ بھی اوپر اٹھ آتے اور ایسا معلوم ہوتا کہ اب وہ باہر نکل جائیں گے لیکن جب شعلے دب جاتے تو وہ لوگ بھی نیچے چلے جاتے۔
• اس تنور میں ننگے مرد اور ننگی عورتیں تھیں۔ میں نے پوچھا کہ یہ کیا ہے؟ ۔۔۔ انہوں نے کہا: ۔۔۔ جنہیں آپ نے تنور میں دیکھا ہے وہ زنا کار تھے۔

اللَّهُمَّ إِنِّا نَعُوذُبِكَ مِنَ النَّارِ
اے اللہ ! ہم آگ سے تیری پناہ چاہتے ہیں۔ آمین ثم آمین

Leave a Comment