اسلامک معلومات

ایسے اوقات جن میں نماز پڑھنا منع کیا گیا ہے

ایسے اوقات جن میں نماز پڑھنا منع کیا گیا ہے

ایسے اوقات جن میں نماز پڑھنا منع کیا گیا ہے

ایسے اوقات جن میں نماز پڑھنا منع کیا گیا ہے۔ : یہاں کچھ اوقات ایسے ہیں کہ رسول اللہ نے جن میں نماز پڑھنے سے منع فرمایاہے۔
جب سورج طلوع ہوتا ہے (یعنی سورج طلوع ہونے کے وقت)
سورج اپنے اعلی مقام پر پہنچ جاتا ہے یعنی دوپہر
جب سورج غروب ہورہا ہے (یعنی غروب آفتاب کے وقت)
ذیل میں دی گئی حدیث سے ریفرنس
صحیح مسلم کتاب 004 ، نمبر 1811

عقبہ بی عامر نے کہا: “کچھ ایسے اوقات تھے۔  جب رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم نے ہمیں نماز پڑھنے سے منع کیا تھا ۔ یا اپنے میتوں کو دفن کرنے کا حکم دیا تھاجب سورج طلوع ہوتا ہے ۔ جب سورج دوپہر کے وقت اپنے عروج پر ہوتا ہے یہاں تک کہ یہ میریڈیئن کے اوپر سے گزر جاتا ہے ۔  اور جب سورج غروب ہونے قریب آتا ہے”۔
صحیح بخاری جلد 2 ، کتاب 21 ، نمبر 288:

دو نمازوں کے درمیان

“دو نمازوں کے بعد کوئی نماز نہیں ۔  یعنی سورج طلوع ہونے تک نماز فجر کے بعد اور سورج غروب ہونے تک نماز عصر کے بعد۔”
صحیح بخاری ، جلد 1 ، کتاب 10 ، نمبر 560

سیدنا ابو سعید خدری نے بیان کیا کہ میں نے رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کو یہ کہتے ہوئے سنا ہے کہ

“سورج طلوع ہونے تک صبح کی نماز کے بعد کوئی نماز نہیں پڑھی جاتی ہے ۔ اور یہاں تک کہ سورج غروب ہونے تک نماز عصر کے بعد کوئی نماز نہیں پڑھی جاتی ہے”۔”
ابوسعید الخدری رضی اللہ عنہ سےروایت ہے۔ کہ رسول اللہ صل اللہ علیہ نے فرمایا۔

۔ فجر کی نمازکےبعد سورج نکلنےتک کوئی نماز نہ پڑھی جاۓ۔ اور عصرکی نماز کے بعد سورج غروب ہونے تک کوئی نماز نہ پڑھی جا ۓ
حق اور فائدہ کے بارے میں جو بھی لکھا گیا ہے۔  وہ صرف اللہ کی مدد اور ہدایت کی وجہ سے ہے ۔  اور جو بھی غلطی ہو وہ اللہ تنہا بہتر جانتا ہے اور وہی طاقت کا واحد ذریعہ ہے۔

Leave a Comment