اسلامک معلومات

اللہ کا دوست کون؟

سورة المائدہ ٩٣
لَـيۡسَ عَلَى الَّذِيۡنَ اٰمَنُوۡا وَعَمِلُوا الصّٰلِحٰتِ جُنَاحٌ فِيۡمَا طَعِمُوۡۤا اِذَا مَا اتَّقَوا وَّاٰمَنُوۡا وَعَمِلُوا الصّٰلِحٰتِ ثُمَّ اتَّقَوا وَّاٰمَنُوۡا ثُمَّ اتَّقَوا وَّاَحۡسَنُوۡا‌ ؕ وَاللّٰهُ يُحِبُّ الۡمُحۡسِنِيۡنَ ۞

جب قرآن پاک میں شراب نوشی کو ممنوعہ قرار دینے کا آخری حکم آ گیا تو کچھ مسلمان اس بات پہ پریشان ہو گئے کہ جو چیز وہ پہلے نوش کر چکے تھے اس کا کفارہ کیسے کیا جائے تو اللہ تعالی نے اس آیت میں واضح کردیا اور فرمایاکہ جو لوگ ایمان لائے اور نیک کام کیئے ان پہ کچھ گناہ نہیں ہے کہ انھوں نے جو چکھہ جب کہ وہ ڈریں اور اللہ پر ایمان لائيں پھر ڈریں اور اور نیک رہیں اور اللہ نیک لوگوں کو دوست رکھتا ہے۔
اس میں مسلمانوں کیلیئے تین درجے بتائے گئے ہیں
١۔ اسلام: مطلب اسلام میں داخل ہو جانا۔
٢۔ ایمان: یعنی ایمان اس کےدل میں گھر کر جائے اور دل سے اسلام کے ارکان پورے کرے۔
٣۔ احسان: جب اللہ کا تقوہ اتنا گھرا ہو جائے کہ وہ محسوس کرے کہ اللہ کو دیکھ رہا ہےجو بھی عبادت کرے ایسا محسوس کرے اللہ تعالی اس کے سامنے ہے۔

Leave a Comment