اسلامک معلومات

اطاعت رسولﷺاور اس کی اہمیت

.اطاعت رسولﷺاور اس کی اہمیت

اطاعت رسولﷺاور اس کی اہمیت عربی زبان کا لفظ ہے جس کا مطلب حکم ماننا اور فرمانبرداری کا حکم ہے .جس طرح ایک اللہ پر ایمان لانا ضروری ہے .اسی طرح رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کی رسالت پر یقین رکھنا

اطاعت کرنا

آپ صلی اللہ علیہ وسلم کے احکام اور ان کی اطاعت کرنا بھی فرض ہے. حقیقت یہ ہے کہ اللہ تعالی کی اطاعت ممکن نہیں ہے .جب تک رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کی اطاعت نہ کی جائے .اطاعت رسولﷺ اور صحابہ کرام صحابہ کرام رضی اللہ تعالی عنہ تمام معاملات میں نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کی پیروی کرتے تھے .وہ آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی اطاعت کرنے کو اپنی خوش بختی سمجھتے تھے.

نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کے نقش قدم

کھانے پینے اٹھنے بیٹھنے چلنے پھرنے سونے جاگنے کی ہر معاملے میں صحابہ کرام رضی اللہ تعالی عنہ نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کے نقش قدم پر چلتے تھے .رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کی اطاعت کے بارے میں صحابہ کرام کا یہ عالم تھا . ایک مرتبہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم جمعہ کے دن منبر پر تشریف فرما تھے. آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے صحابہ کرام سے فرمایا. بیٹھ جاؤ اس وقت عبداللہ بن مسعود رضی اللہ عنہ مسجد کے دروازے سے داخل ہو رہے تھے.

 

جب انہوں نے یہ سنا تو فوراً بیٹھ کر جب آپ صلی اللہ علیہ وسلم کے آگے آنے کے لئے فرمایا تھا . اٹھ کر آ گیا دنیا اور آخرت میں کامیابی کے لیے اطاعت رسولﷺبہت ضروری ہے . کیونکہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کی اطاعت کے بغیر ایمان مکمل نہیں ہوتا .لہذا دنیا اور آخرت کی کامیابی کے لئے لازم ہے. ہر مسلمان زندگی کے تمام معاملات میں رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کی مبارکہ پر عمل کریں. اس لیے آپ صلی اللہ علیہ وسلم /.کے اسوہ حسنہ پر عمل کرنے میں ہی اللہ تعالی کی رضا ہے

ایمان کی بنیادی شرط

.اللہ تعالی کا فرمان ہے
اے پیغمبر لوگوں سے کہہ دیں کہ اگر تم نے اللہ سے محبت رکھتے ہو. تو میری پیروی کرو اللہ تم سے محبت کرے گا اور تمہارے گناہ معاف کر دے گا ہمارے اطاعت رسولﷺ اس کے بھی ضروری ہے. کہ آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے جو کچھ بھی بتایا ہے .وہ اپنی مرضی سے نہیں بلکہ اللہ تعالیٰ کے حکم سے بتایا ہے. نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم کے فیصلوں کے مطابق عمل کرنا ایمان کی بنیادی شرط ہے. اللہ تعالی نے فرمایا پیغمبر صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم آپ کے پروردگار کی قسم یہ لوگ جب تک اپنے تنازعات میں آپ صلی اللہ علیہ وسلم کو منصف نہ بنائیں.

جنت میں داخل

جو فیصلہ آپ اس سے اپنے دل میں تنگ نہ پائی بلکہ اس کو خوشی سے مان لیں تب تک مومن نہیں ہوں گے .حضور اکرم صلی اللہ علیہ وسلم نے فرمایا میری ساری امت جنت میں جائے گی سوائے ان کے جنہوں نے انکار کیا صحابہ کرام رضی اللہ عنہ نے عرض کیا .یا رسول اللہ ان کا کون کرے گا .فرمایا. جو میری اطاعت رسولﷺ کرے گا .وہ جنت میں داخل ہو گا اور جو میری نافرمانی کرے گا . انکار کرنے والا
ہوگا نبی اکرم صلی اللہ علیہ وسلم کی اطاعت کے بغیر ایمان مکمل نہیں ہوتا .

اطاعت کے بغیر ایمان مکمل نہیں

لہٰذا ایک مسلمان پر لازم ہے کہ وہ اللہ تعالیٰ کے ساتھ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کی اطاعت کرے. کیونکہ نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کی زندگی ہمارے لیے مشعل راہ ہے .جیسا کہ قرآن حکیم میں ارشاد ہے کہ ہمارے لئے اللہ کے رسول کی زندگی میں عمدہ نمونہ ہے

Leave a Comment