اسلامک معلومات اسلامک واقعات

ابلیس نے حضرت آدم علیہ السلام کو سجدہ کرنے سے کیوں انکار کیا؟

جب اللہ تعالی نے ایک گدلی مٹی سے حضرت آعلیہ السلام کا پتلا بنایا اور پھر اس میں روح پھونکی تو اللہ نے سب فرشتوں کو حکم دیا کہ حضرت آدم کو سجدہ کریں لیکن ابلیس نے نکار کیا-یہاں تک کہ وہ اپنے فیصلے پر اٹل رہا اور پھر اللہ تعالی نے اسے جنت سے بے دخل کر دیا-اس نے اللہ تعالی سے ایک مہلت مانگی کہ قیامت کے دن تک اسے اس بات کی اجازت دیں دے کہ وہ لوگوں کو بھڑکا کر اپنا پیروکار بنا سکے-اللہ تعالی نے اجازت دے دی اور اسے یہ بھی باور کروایا کہ جو مضبوط ایمان والے ہونگے وہ کبھی شیطان کے پیروکار نہیں بنے گے-اس نے بھی االلہ تعالی سے وعدہ کیا کہ وہ اس کے بندے کو ہر طرح سے ورغلائے گا یہاں تک کہ وہ شیطان کا پیروکار بن جائے گا-

جب ہم کسی غلط کمپنی میں پڑ جاتے ہیں یعنی برے دوست ملتے ہیں تو وہ ہمیں خود برے کاموں میں لگاتے ہیں ہمارا ہاتھ پکڑ کر لے کر جاتے ہیں-لیکن شیطان کو یہ زحمت نہیں کرنی پڑتی-وہ صرف اور صرف وسوسہ ڈالتا ہے-اور ہم اس وسوسے میں پڑ بھی جاتے ہیں-ہم اپنے نفس سے ہار جاتے ہیں-اور گناہ میں پڑ جاتے ہیں یہاں تک کہ وہ گناہ ہماری عادت بن جاتا ہے اور اسے چھوڑنا ہمیں نا ممکنات میں سے لگتا ہے-

ہم کتنی آسانی سے اللہ تعالی کو مایوس کر دیتے ہیں-اللہ نے شیطان سے کہا تھا کہ مضبوط ایمان والے شیطان کے شکنجے میں نہیں آئیں گے اس کا مطلب ہمارا ایمان انتہائی کمزور ہے-جب ہم نفس سے ہارتے ہیں اور گناہ کی طرف مائل ہوتے ہیں تو شیطان ہنس رہا ہوتا ہے وہ ہمارا تمسخر اڑاتا ہے لیکن ہمیں پتا ہی نہیں ہوتا-

Leave a Comment