اسلامک معلومات

آپ ﷺ عالم جمادات کے معجزات

آپ ﷺ عالم جمادات کے معجزات ..حضرت محمدﷺ معجزات کی حکمرانی کا پرچم عالم کائنات پر پہلے ہی لہرا چکے ہیں۔ ان معجزات میں سے چند ایک درج ذیل ہیں۔
چٹان کا بکھر جانا … غزوہ خندق میں صحابہ کرام ؓ مدینہ منورہ کے چاروں اطراف کفار کے حملوں سے بچنے کیلئے خندق کھود رہے تھے کہ ایک سخت چٹان نکل آئی۔ صحابہ کرام ؓ نے اپنی اجتماعی طاقت سے ہر چند اسکو توڑنا چاہا مگر وہ کسی طرح نہ ٹوٹ سکی۔ پھاوڑے اس پر پڑ پڑ کر اُچٹ جاتے تھے۔ جب لوگوں نے مجبور ہوکر آپ ﷺ کے سامنے سارا ماجرا عرض کیا تو آپﷺ خود اٹھ کر تشریف لائے اور پھاوڑا ہاتھ میں لے کر ایک ضرب لگائی تو وہ چٹان ریت کے بھر بھرے ٹیلوں کی طرح چور ہو کر بکھر گئی۔ (بخاری)

اشارہ سے بتوں کا گر جانا فتح مکہ سے پہلے خانہ کعبہ میں تین سو ساٹھ رکھے ہوئے تھے اور انکی پوجا کرتے تھے۔ فتح مکہ کے دن آپﷺ کعبہ میں تشریف لائے اور آپ کے دست مبارک میں ایک چھڑی تھی۔ آپ زبان اقدس سے یہ آیت تلاوت فرما رہے تھے کہ ترجمہ :”حق آ گیا اور باطل مٹ گیا یقیناً باطل مٹنے ہی کے قابل تھا ” (17:81) آپ اپنی چھڑی سے جس بت کی طرف بھی اشارہ فرماتے تھے وہ بغیر چھڑی چھوئے زمین پر گر جاتا تھا۔ پہاڑوں کا سلام کرنا حضرت علیؓ فرماتے ہیں کہ ایک مرتبہ میں آپﷺ کے ساتھ مکہ مکرمہ کے ایک طرف نکلا تو کیا دیکھتا ہوں کہ جو درخت اور پہاڑ بھی سامنے آتا ہے اس سے ” السلام علیک یارسول اللہ” کی آواز آتی ہے اور میں خود آواز اپنے کانوں سے سن رہا تھا”۔ (ترمذی) اسی طرح حضرت جابر بن سمرہ ؓ فرماتے ہیں آپﷺ نے نے فرمایا کہ ” مکہ میں ایک پتھر ہے جو مجھے سلام کیا کرتا تھا۔ میں اب بھی اس کو پہچانتا ہوں”۔ (ترمذی)

پہاڑ کا ہلنا بخاری شریف میں ہے کہ ایک دن آپﷺ حضرت ابوبکر ؓ ، حضرت عمر ؓ اور حضرت عثمان ؓ کو لے کر احد پہاڑ پر چڑھے۔ پہاڑ جھوم کر ہلنے لگا تو آپﷺ نے پہاڑ کو ٹھوکر ماری کر یہ فرمایا کہ ” ٹھہر جا ” اس وقت تیری پشت پر ایک پیغمبر ہے اور ایک صدیق ہے اور دو عمر و عثمان شہید ہیں۔
(بخاری) مٹھی بھر خاک کا شہکار حضرت سلمہ بن اکوع ؓ سے روایت ہے کہ جنگ حنین میں جب کفار نے آپﷺ کو چاروں اطراف سے گھیر لیا تو آپﷺ اپنی سواری سے اتر پڑے اور ایک مٹھی بھر مٹی لے کر کفار کے چہروں پر پھینکا اور ” شَاھَتِ الْوَجَوُہ” سارے لشکر کی آنکھوں میں اس طرح مٹی پڑی کہ ایک آدمی بھی باقی نہ رہا جس کی دونوں آنکھیں مٹی سے بھر نہ گئی ہوں۔ چنانچہ سب اپنی اپنی آنکھیں ملتے ملتے پیٹھ پھیر کر بھاگ نکلے اور شکست کھا گئے اور آپﷺ نے اموال غنیمت کو مسلمانوں میں تقسیم فرمایا۔ (مشکوة) قارئین کرام اللّٰہ پاک ہمیں اپنے پیارے حبیب حضرت محمدﷺ کی تعلیمات پر عمل کرنے کی توفیق عطا فرمائے آمین۔

Leave a Comment