اسلامک معلومات

آپﷺکی بچوں کے ساتھ خوش طبعی

آپﷺکی بچوں کے ساتھ خوش طبعی

آپﷺکی بچوں کے ساتھ خوش طبعی

آپﷺکی بچوں کے ساتھ خوش طبعی: حضور صلی اللہ علیہ وسلم بچوں پر بہت شفقت فرماتے، ان سے محبت کرتے۔ ان کے سر پر ہاتھ پھیرتے۔ ان کو پیار کرتے اور ان کے حق میں دعائے خیر فرماتے۔ بچے قریب آتے تو ان کو گود میں لیتے ان کو بڑی محبت سے کھلاتے۔

*بچوں کے ساتھ کھیلنا*:-

آپ صلی اللہ علیہ وسلم بچوں کے ساتھ کھیلتے اور ان کو بہلاتے بھی تھے۔کبھی بچہ کے سامنے اپنی زبان مبارک نکالتے بچہ خوش ہوجاتے۔ کبھی لیٹے ہوتے تو اپنے قدموں کے تلوؤں پر بچے کو بٹھا لیتے۔  اور کبھی سینہ اطہر پر بچہ کو بٹھا لیتے۔ اگر کئی بچے ایک جگہ جمع ہوتے تو آپ صلی اللہ علیہ وسلم ان کو ایک قطار میں کھڑا کردیتے۔  اور آپ صلی اللہ علیہ وسلم اپنے دونوں بازوؤں کو پھیلا کر بیٹھ جاتے۔  اور فرماتے بھئی تم سب دوڑ کر ہمارے پاس آؤ۔ جو بچہ سب سے پہلے ہم کو چھو لے گا ہم اس کو یہ اور یہ دیں گے۔ بچے بھاگ کر آپ صلی اللہ علیہ وسلم کے پاس آتے، کوئی آپ صلی اللہ علیہ وسلم کے پیٹ پر گرتا کوئی سینہ اطہر پر آپ صلی اللہ علیہ وسلم ان کو سینہ مبارک سے لگاتے اور پیار کرتے۔ ( خصائل نبوی)

آپ صلی اللہ علیہ وسلم کا بچوں کے ساتھ حسنِ سلوک

حضور صلی اللہ علیہ وسلم جب بچوں کے قریب سے ہوکر گزرتے تو ان کو خود اسلام علیکم فرماتے اور ان کے سر پر ہاتھ رکھتے اور چھوٹے بچوں کو گود میں اٹھا لیتے۔ آپ صلی اللہ علیہ وسلم جب کسی ماں کو اپنے بچے سے پیار کرتا دیکھتے تو بہت متاثر ہوتے کبھی ماؤں کی بچوں سے محبت کا ذکر آتا تو فرماتے۔ “اللہ تعالیٰ جس شخص کو اولاد دے اور وہ اس سے محبت کرے اور اس کا حق بجا لائے تو وہ دوزخ کی آگ سے محفوظ رہے گا۔

جب حضور صلی اللہ علیہ وسلم سفر سے تشریف لاتے۔  تو راستے میں جو بچے ملتے انہیں نہایت شفقت سے اپنے آگے یا پیچھے سواری پر بیٹھا لیتے تھے۔ بچے بھی آپ صلی اللہ علیہ وسلم سے بہت محبت کرتے تھے۔  جہاں آپ صلی اللہ علیہ وسلم کو دیکھا لپک کرآپ صلی اللہ علیہ وسلم کے پاس پ پہنچ جاتے۔ آپ صلی اللہ علیہ وسلم ایک ایک کو گود میں اٹھاتے۔  پیار کرتے اور کوئی کھانے کی چیز عنایت فرماتے کبھی کھجوریں، کبھی تازہ پھل اور کبھی کوئی اور چیز۔ نماز کے وقت مقتدی عورتوں میں سے کسی کا بچہ روتا تو آپ صلی اللہ علیہ وسلم نماز کو مختصر کردیتے تاکہ بچہ کی ماں بے چین نہ ہو۔ (خصائل نبوی)

Leave a Comment